جگر Liver

جگر Liver

جگر ہمارے جسم کا سب سے بڑا اندرونی عضو اور غدود ہے جس کا وزن 1 سے ڈیڑھ کلو گرام تک ہوتا ہے- بیرونی سب سے بڑا عضو جلد ھے۔ اسکے پانچ شگاف یا حصے ھوتے ھیں۔ ایک شگاف کے اندر پتہ کی نالی ھوتی ھے اور جگر صفراء پیدا کر کے پتہ میں جمع کرتا رھتا ھے۔24  گھنٹوں کے دوران آدھا کلو سے 1 کلو تک پت یا صفراء بنتا ھے اور ھر وقت بنتا رھتا ھے۔ دوسرا شگاف لبلبہ سے جڑا ھوتا ھے۔ بعض جانوروں میں جگر چربی بھی جمع کرتا ھے جوکہ ھاؑبرنیٹ کو وقت کام آتی ھے۔ جگر ہمارے جسم میں دائیں جانب پیٹ کے اوپر اور پسلیوں کے پیچھے ہوتا ہے – جگر وہ تمام غذاجو ہم کھاتے ہیں اسے توانائی میں تبدیل کردیتا ہے جبکہ یہ توانائی ہمارے جسم کے لیے بہت ضروری ہوتی ہے ورنہ تھکاوٹ ھو جاۓ گی۔ پوری طرح اعضا کو نہ پہنچنے کی وجہ سے بدن کی حالت نہایت خراب ہوجاتی ہے جگر ایک نازک عضو ہے جو نہ زیادہ سردی برداشت کرتا ہے اور نہ زیادہ گرمی ۔  کیونکہ یہ خود بدن کی حرارت کنٹرول کر رھا ھوتا ھے۔  بدھضمی اور بے احتیاطی سے جگر کی حرارت بڑھ جاتی ہے۔ جگر جو بنیادی افعال انجام دے رھا ھوتا ھے وہ یہ ھیں:

شادی کی اصل عمر کونسی ہے یہاں کلک کریں۔

ایسی بیماریاں جو صرف ڈپریشن سے ہوتی ہیں جانیے۔

بنیادی افعال

خارجی خطرناک اجسام کو ختم کرنا، خون کی صاف کرنا، قوتِ مدافعت بڑھاکر جراثیم کو مارنا جو کہ چھوٹی آنت سے بلا آخرفضلہ کی صورت میں خارج کر دیۓ جاتے ھیں، بنیادی اور ضروری اشیاء پھنچانا، جگر سے صفراء پتہ میں ڈالنا، خون میں خاص پروٹین ڈالنا اور امینوایسڈ کو یوریا میں تبدیل کرنا، کولیسٹرول بنانا (یاد رکھیں کہ 70٪ کولیسٹرول جگر بنا رھا ھوتا ھے لھزا ھمیں باھر سے کولیسٹرول لینے کی غرورت نھیں ھوتی)، گلوکوز بنانا اور جمع کرنا، ھیموگلوبن کے لیے فولاد مھیا کرنا، امونیا کو یوریا میں تبدیل کرنا (یوریا جو ھے وہ گوشت کھانے سے بنتی ھے)، خون کے لوتھڑے بننے سے روکنا، خوراک سے فولاد کو جزب کرکے خون کے اندرشامل کرتے رھنا۔ نیا خون بنانا، خون میں سے فاسد مادوں کو چننا، الکحل کو چن کر آنتوں میں بھیجنا اور اسکے مضر اثرات سے بچانا اس دوران بعض اوقات خود متاثر ھو جاتا ھے وغیرہ

علامات: اگر آپ کو ان علامات سے واسطہ پڑ رھا ھے تو عین ممکن ھے کہ اپ جگر کے عارضے میں مبتلا ھیں۔ وزن میں اچانک کمی، بھوک ختم ہوجانا، سستی، پژمردگی، چھرے پر پیلاھٹ، ,غنودگی، چکر آنا اور متلی و قے کا احساس, ہر وقت تھکاوٹ کا احساس ,پیٹ کے اوپری حصے میں درد، پسلیوں کے نیچے دایں جانب درد، خون کا عمدہ نہ بننا۔ پلیٹ لیٹس کی کمی، پاؤں کی سوجن، یرقان ھو جانا، معدہ میں گرانی و درد، ھیضہ، قبض، گیس، زبان سفید، سر درد، وغیرہ

اسباب: خون کی منقلی، متاثرہ پانی اور خوراک سے، انگریزی ادویات سے، شراب نوشی، تمباکو نوشی، شدید بدھضمی، کافی کا زیادہ استعمال جبکہ جدید سایؑنس اسکو نھیں مانتی، برف اور ٹھنڈے پانی کے بے تھاشا استعمال، کھڑے ھوکر پانی پینا.

صرف عورتوں میں ہونے والے کینسرز

غزاوپرھیز: یہ چیزیں متوازن طور پر کھایں۔ تازہ پھل، شھد، کلونجی، لھسن، ھلدی، چقندر، لیموں، سبز چاۓ، اخروٹ، وٹامن سی وغیرہ۔ یہ اشیاء جگر کی صفایؑ کرتی ھیں۔ چقندر، سبز چاۓ، اخروٹ، لیموں، ھلدی، لھسن،  سیب، بروکلی، گاجر، بند گوبھی، پھول گوبھی، پالک، ایواکاڈو وغیرہ۔ زیادہ پیٹ بھر کر کھانا، تیز مرچ مصالحہ دار کھانے، شدید محنت کرکے فوراً پانی پینا، گھی، چینی اور برف کا کثرت استعمال وغیرہ۔

جگر کو مضبوط کرنے والی ادویات: جوزبواکاسنی، سنبل رومی، زرشک، منقی، لونگ، پستہ، مصطگی، سقمونیا، ریوند، روغن بلسن، تج، غافث، نرکچور، بلسان کے بیج، ناگر موتھ، زیرہ سیاہ، دار چینی، اناردانہ، چھڑیلہ، پودینہ کوہی، تخم کثوث، افستین رومی، بارتنگ، بادر بخبوہہ، سوگند بالا، الایؑچی خورد وغیرہ۔

طبیب کے متعلق چند ضروری ہدایات

مریض کے متعلق چند ضروری ہدایات

جگر کے گھریلو ٹوٹکے

  • ڈھایؑ تولہ شھد گاۓ کے دودھ میں ڈال کر پیؑں۔

  • گاجر کا جوس پیؑں۔ مناسب مقدار میں پپیتہ روزانہ کھایں۔

  • الوبخارہ، املی، نیلوفر ھر ایک آدھی چھٹانک رات کو بھگو دیں۔ دن میں تین بار یہ پانی پینا مفید ھے۔

  • مولی کے پتوں کا پانی صبح نھارمنہ پینا مفید ھے۔

  • خشک دھنیا، سونٹھ، سیاہ نمک کا چورن دن میں تین بار کھانا بدھضمی میں مفید ھے۔

  • 10 گرام اجوایؑن ایک گلاس پانی میں 24 گھنٹے کے لیے بھگو دیں۔ پانی کو چھان لینے کے بعد اس میں 5 قطرے کلونجی کا تیل ڈال کر پیؑں۔

  • قلمی شورہ، نوشادر، جوکھار، ریوند چینی، سونف، زیرہ سفید ھر ایک 1 پاؤ۔ تمام ادویات کا سفوف بنا لیں۔ 3-6 ماشہ صبح شام ھمراہ شربتِ بزوری۔ (بشکریہ بیاضِ شھباز)

  • جگرین: نوشادر، تخم کاسنی، سونٹھ، ریوند چینی، سناء مکی مصفیٰ ھر ایک 4 تولہ، سھاگہ، فلفل دراز، ملٹھی، گندھک آملہ سار، قلمی شورہ، پوست ھلیلہ زرد ھر ایک 2 تولہ۔ سفوف بنا لیں۔ 3 ماشہ صبح شام پانی کے ساتھ دیں۔ جگر، معدہ، دایؑمی قبض کی جملہ بیماریوں کا علاج ھے۔ (بشکریہ بیاضِ شھباز)

  • نوشادر 1 تولہ، قلمی شورہ 1 تولہ، ریوند خطایؑ 1 تولہ، کشتہ فولاد 1 تولہ، کشتہ خبث الحدید 1 تولہ، سوڈا بایؑ کارب 1 تولہ۔ کوٹ چھان کر سفوف بنا لیں۔ 4-8 رتی صبح شام ھمراہ شربتِ دینار۔ جگر کی جملہ امراض می مفید ھے۔

  • ریوند خطایؑ 10 گرام، نوشادر 10 گرام، قلمی شورہ 20 گرام الگ الگ پیس کر ملا لیں۔ 4 رتی پانی کے ساتھ۔ روزانہ۔ جگر کی جملہ بیماریوں میں اکسیر ھے۔ چند یوم میں جگر کی اصلاح ھو کر تمام شکایات رفع ھو جاتی ھیں۔

  • ریوند چینی 10 گرام، نوشادر 10 گرام، خوراک 1 سے ڈیڑھ ماشہ۔

  • آرد گندم  آدھ کلو  آرد نخود آدھ کلو گائےکے گھی آدھ کلو میں بریاں کریں۔ دارچینی 6 گرام بہمن سفید 6 گرام بہمن سرخ 5 گرام دانہ الائچی کلاں 5 گرام زنجیل 5 گرام مشک خالص 3 گرام مغز پستہ 25 گرام مغز بادام 25 گرام مغز فندق 24 گرام مغز نارجیل 24 گرام مغز چلغوزہ 24 گرام نبات سفید ڈیڈھ کلو شہد آدھ کلو کا قوام کر کے حلوہ بنائیں۔ 20 گرام صبح اور20 گرام شام کو کھائیں دودھ کے ساتھ انشاءاللہ  دل دماغ و جگر کو طاقت ملے گی 40 روز یت یہ نسخہ کریں۔ (بشکریہ اُؐم الشفا ہربل)۔

  • اگر خون کی کمی کی مسؑلہ ہو تو موصلی سفید 3 گرام تامکھانہ 30 گرام لاجونتی 30 گرام بیدانہ 30 گرام الائچی خورد،گرام مغز بادام 30 گرام چھلکا اسپغول 30 گرام کاٹھیا سپاری 30 گرام۔ سب ادویہ کا سفوف بنا کر روزانہ 5 گرام سفوف آدھا کلو گائے کے دودھ میں ملا کر صبح نہار استعمال کریں۔ یہخون کی کمی اور اعصابی کمزوری کے لیے اکثیر ہے۔

  • بارش کا پانی لےکر 70 مرتبہ سورۂ فاتحہ ، 70مرتبہ آیت الکرسی  اور70،70مرتبہ چاروں قل پڑھ کردم کریں دنیا کے ایسے مریض جو لاعلاج ہو چکے ہیں۔اسے دم کرکے پلائیں اللہ کے فضل سے مریض ایسے ٹھیک ہوتا ہے جسکا گمان نہیںہوتا ۔اگر بارش کا پانی مزید نہ ملے تو سادہ پانی ملا کر بڑھا تے رہیں ۔چند دن یا زیادہ عرصہ مریض کو استعمال کروائیں۔ (عبقری)

جگر Liver

جگر کی جملہ بیماریاں

  1. جگر کا بڑھ جانا (Hepatomegaly)

اگر جگر کے بڑھنے کے ساتھ بلغم کی زیادتی ھوتو ھونٹ اور زبان کی رنگت سفید ھو گی۔ بدن میں سستی اور ڈھیلاپن ھوگا۔ چھرے پر بھربھراھٹ ھو گی۔ پیشاب گاڑھا، نبض آھستہ اور جگر کا مقام سرد ھو گا۔ پیشاب اور پاخانہ گوشت کے دھون جیسا ھو گا۔

اگر حرارت کی زیادتی اور صفراء کی وجہ سے ھو تو مریض کو جگر کے مقام پر سوزش اور جلن ھو گی۔ پیاس زیادہ، نبض تیز، بھوک کم، پیشاب سرخ زردی مایؑل، منہ تلخ ھو گا۔

اگر خون کی زیادتی کی وجہ سے ھو تو اوپر والی علامت کے ساتھ چھرے پر سرخی، رگیں پھولی ھویؑ، منہ کا ذاؑقہ شریں اور اعضاء میں گرانی ھو گی۔

  • تمام ھالتوں میں آب برگ کاسنی سبز مروق 5 تولہ، آب برگ مکوسبز مروق 5 تولہ میں شربت بزوری 4 تولہ ملا کر پیؑیں۔

  • گھیگوار کے گودے کا رس آدھا چمچ، ھلدی کا سفوف 1 چٹکی، پسا ھوا سوندھا نمک ا چٹکی پانی کے ساتھ دیں۔

  • ترپھلہ چورن 5 گرام کو ایک کپ پانی میں جوش دیں کہ پانی چوتھایؑ رھ جاۓ۔ ٹھنڈا ھونے پر ایک چمچ شھد کے ساتھ دیں۔

  • پیپل، باؤ بڑنگ، جوکھار ھر ایک 5 گرام لے کر کوٹ چھان لیں۔ ایک چٹکی شھد کے ساتھ صبح دیں۔

  • تیارشدہ ادویات: حبِ کبد نوشادری 2-4 گولیاں عرقِ بادیان کے ساتھ کھانے کے بعد دیں۔ عرقِ بادیان 125 ملی لیٹر لیں۔ عرق برنجاسف 60-125 ملی لٹر لیں۔

  • پرھیز: گھی، چینی، نمک، ھلدی، پریشانی، قبض سے بچیں۔ اگر بخار ھو تو پیڑو پر پانی کی پٹی 15-20 منٹ تک رکھیں۔ مریض کے سر کو گیلے کپڑے سے بار بار پونچھیں۔ جسم پر سرسوں کی مالش کریں۔ سردیوں میں 10 منٹ دھوپ میں بٹھایں۔ چوکر سمیت روٹی اور ساگ دیں۔ دالیں کم دیں۔ موسمبی، پپیتہ، امرود اور سیب دیتے رھیں۔

  • اگر جگر اور تلی بڑھ جایں چھونے سے تکلیف ہو تو عرق کاسنی 3 بڑے چمچ، عرق مکو 3 بڑے چمچ، عرق برنجاسف 3 بڑے چمچ، شربت دینار 3 بڑے چمچ، معجون دبیدالورد 1 چاۓ کی چمچ، رایؑ بنارسی 100 گرام، سہاگہ کھیل شدہ 50۔ باریک پیس کر رکھ لیں۔ صبح شام 1-1 گرام۔ دوپہر اور رات کے کھانے کے بعد جوارش انارین 5 گرام۔ (اخبارِ جہاں)

  1. جگر کا سکڑ جانا (Cirrhosis)

اس بیماری کی وجہ بھت ساری جگر کی دوسرے بیماریوں کا بگڑجانا ھوتا ھے۔ مثلاً یرقان یا شراب نوشی سے جگر متاثر ھوتا ھے تو سیروسز کا باعث بنتا ھے۔

  1. پیلیا (Jaundice)

بعض لوگ پیلیا کو یرقان کی ایک قسم سمجھتے ھیں۔ وہ غلطی پر ھیں۔ دراصل یرقان (hepatitis A) وایؑرس سے پیدا کردہ ھے جبکہ پیلیا جگر کے نقص کو کھتے ھیں۔ ۔ پیلیا یرقان اے کی ایک علامت سمجھی جا سکتی ھے۔ علامات میں بعض علامات ھی یرقان سے ملتی جلتی ھیں۔ عام طور پر پیلیا میں جلد زرد، آنکھیں سفید، شدید کمزوری اور بھوک میں کمی شامل ھیں۔ جبکہ یرقان میں بخار، پیچش، متلی، پیٹ خراب، کمزوری اور بھوک میں کمی شامل ھیں۔ پیلیا میں جگر کی رطوبت جسے بایؑل (bile) کھتے ھیں میں ایک اور مادہ جسے بایؑلوربن (bilirubin) کھتے ھیں کی خون میں زیادتی کی وجہ سے جلد کا رنگ زرد ھو جاتا ھے۔

پیلیا کا علاج ھم جلد لکھیں گے

4. یرقان (Hepatitis)

انگریزی میں ھیپا جگر کو کھتے ھیں اور آیٹس سوزش کو کھتے ھیں۔ ھیپاٹیٹس سے مراد جگر کی وہ سوزش ھے جو کسی بھی وجہ سے ھو۔ پوری دنیا میں ھر سال یرقان کا عالمی دن 28 جولایؑ کو منایا جاتا ھے۔ اس کی پانچ اقسام ھیں۔ اے، بی، سی، ڈی، ای۔ جس میں اے اور ای متاثرہ خوراک و پانی سے ھوتا ھے۔ بی جنسی تعلق، ماں سے ھونے والے بچے کو اور خون کی منتقلی سے ھوتا ھے۔ جبکہ سی صرف خون کی منتقلی سے ھوتا ھے۔ ڈی صرف ان لوگوں کو ھوتا ھے جنکو بی ھو۔ یرقان اے بی اور ڈی کا علاج قوتِ مدافعت بڑھا کر کیا جاتا ھے اس لیے انکی ویکسین میسر ھے۔ سی کے لیے ویکسین نھیں ھے لھزا زیادہ مھلک ھے۔ ای کے لیے وکسین فی الحال صرف چین میں ھے۔ تمام اقسام غریب ممالک میں عام ھیں۔ یرقان کے متعلق ضروری معلومات درجِ ذیل ھیں۔

  • یرقان اے زیادہ تر بوڑھوں اور بچوں کو ھو جاتا ھے وجہ مدافعت کی کمی ھے۔ بعض اوقات اے میں صفراء کی زیادتی کی وجہ سے پیلیا ھو جاتا ھے۔ اے 14-28 دین میں نمودار ھو جاتا ھے۔ اس میں علاج کے لیے درج زیل نسخوں میں سے کسی پر عمل کریں۔

    • دارچینی، الایؑچی خورد، ریوند، سونف، مصطگی، سنبل الطیب، جوکھار ھر ایک 7 ماشہ کوٹ چھان کر سرکہ میں گولی دانہ ماش کے برابر بنا لیں۔ صبح کے وقت ایک گولی ھمراہ شربتِ بزوری۔

  • یرقان بی سب سے خطرناک قسم ھے۔ بی سے مرنے والوں کی تعداد سی سے ڈبل ھے۔ معدہ میں شدید جلن تیزابیت کے ساتھ سیاہ پاخانے آتے ھیں۔ اس میں زیادہ تر علامات ظاھر ھی نھیں ھوتی۔ ورلڈ ھیلتھ ارگنایؑزیشن کی ایک رپورٹ کے دوران ایک اندازے کے مطابق صرف 2015 میں 887،000 افراد مرگۓ تھے۔ اور اندازاً اب تک 25 کروڑ 70 لاکھ انسان کسی نہ کسی طور پر متاثر ھو چکے ھیں۔ ایک اندازے کے مطابق پاکستان میں یرقان بی سے متاثرہ افراد کی تعداد 55 لاکھ کے قریب ھے۔

    • کشتہ فولاد 6 ماشہ، طباشیر 1 تولہ، الایؑچی خورد 1 تولہ، افسنتین 6 ماشہ، جوھر نوشادر 6 ماشہ، مصری قابلی ڈھایؑ تولہ، سفوف بنا لیں۔ مقدار 1 ماشہ روزانہ۔

  • ورلڈ ھیلتھ ارگنایؑزیشن کی ایک رپورٹ کے مطابق پوری دنیا میں یرقان سی کے 7 کروڑ 10 لاکھ مریض ھیں۔ اور ھر سال تقریباً 4 کروڑ مر جاتے ھیں۔ یرقان سی کا علاج صرف اور صرف مدافعت بڑھاکر کیا جا سکتا ھے۔ تقریباً 57٪ جگر سکڑنے اور 78٪ جگر کے کینسر کی وجہ ھرقان بی اور سی ھیں۔ جبکہ پاکستان میں کل یرقان سی سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 1 کروڑ 5 لاکھ ھے۔ ابھی بھی پاکستان کا شمار ان ممالک میں ھوتا ھے جھان یرقان سی ایک وباء کر صورت اختیار کر چکا ھے۔ جنگ زدہ ممالک افغانستان اور عراق میں بھی صورتِ حال ھم سے اچھی ھے۔

    • پوست ھلیلہ زرد، پوست بلیلہ، آملہ ھر ایک 1 پاؤ، مرچ سیاہ، فلفل دراز، سونٹھ ھر ایک 4 تولہ، پھلی چاروں ادویاء کوٹ لیں۔ پھر کسی چینی یا مٹی کے برتن میں ڈال کر گاۓ کا دھی اتنا ڈالیں کہ 4 انگل ھو جاۓ۔ باریک رومال سے سردیوں میں 1 ھفتہ اور گرمیوں میں 4 دن تک ڈھانپ دیں۔ دوبار ھلاتے رھیں۔ اگر دھی پھلے خشک ھو جاۓ تو اور ڈال کر مدت پوری کریں۔ مدت پوری ھونے کے بعد ساۓ میں خشک کرکے کوٹ لیں اور اس میں مرچ سیاہ، فلفل دراز اور سونٹھ کا سفوف ڈال دیں۔ مقدار 3 ماشہ صبح دھی یا چھاچھ کے ساتھ 8 دن تک۔ یَاحسیبُ کو 300 بار پانی پر دم کر کے 21 دن روزانہ پلایں۔

5. درد جگر(Hepatalgia)

جب جگر کی سوزش، فیٹی لیور، یرقان بگڑ جاۓ یا کینسر ھو تو جگر کے مقام پر درد ھوتا ھے۔ جگر اپنا کام صھیح طرح انجام نھیں دے سکتا۔ کچھ دوسرے امراض سے بھی جگر کے مقام پر درد ھو سکتا ھے جیسے کہ سوزش معدہ، پتہ کی پتھری، تلی کا بڑھ جانا، جگر کی رسولی اور ولسن بیماری وغیرہ۔ صفراء یا بلغم کی زیادتی سے بھی درد ھو سکتا ھے۔

علامات: پیشاب و پاخانہ گوشت دھون کی صورت آتا ھے، بدن کمزور، بھوک ختم ھو جاتی ھے۔ جگر کے مقام پر غزا گزرنے کے وقت جگر کے مقام پر تھوڑا تھوڑا درد ھوتا رھتا ھے۔

پرھیز: بھت گرم و سرد اشیاء سے پرھیز کرایں۔ نیز ثقیل اشیاء بالکل نہ دیں۔

  • سبز مکو کا پانی 5 تولہ، برگِ کاسنی کا پانی 4 تولہ، شربتِ بزوری 4 تولہ میں ملا کر پیؑں۔ (بشکریہ بیاضِ اجمل)

  • عود غرقی، اذخر، طباشیر، مجیٹھ، منقہ، لاکھ مفسول، گردسماق، اناردانہ، حبِ بلسان، عود بلسان، زعفران ھر ایک 3 ماشہ کوٹ چھان کر سفوف بنا لیں۔ صبح شام 1 ماشہ کھایں۔ (بشکریہ بیاضِ اجمل)

 

6. وجع الکبد (Biliary Colic)

جب صفراء بایؑل میں گرتے وقت منجمند ھو جاۓ یا پتھریاں بن جایں جو کہ بایؑل نالی (Bile Duct) میں رکاوٹ کر دیں۔ تو اسے وجع الکبد کھتے ھیں۔ اس مقام پر شدید درد ھوتا ھے اور ابکایؑاں بھی آتی ھیں۔

اسباب: کثرتِ گوشت خوری، کثرتِ مے نوشی، ورزش نہ کرنا، جگر کی اس مقام پر کو سوزش، دایؑمی قبض۔ اس مرض کی دو وجوھات ھوتی ھیں۔ جو درد سردی کی وجہ سے ھو وہ ھلکا ھلکا شروع ھوتا ھے پھر کچھ عرصہ بعد اسھال آنے نگتے ھیں۔ زبان سفید اور آنکھوں کے پپوٹے پھولے پھولے رھتے ھیں۔

  • مقام درد پر ان اشیاء کا ٹکور کریں۔ گل بابونہ 2 تولہ، اکلیل الملک، گل ٹیسو 2 تولہ، بزرالبنج 1 تولہ، پوست خشخاش 2 تولہ کو 1 سیر پانی میں جوش دیں۔

  • اگر درد گرمی کی وجہ سے ھو تو مقام درد پر سوزش و جلن محسوس ھوتی ھے، پیشاب سرخ، پیاس شدید اور بخار تیز ھوتا ھے۔ گل بنفشہ، تخم کاسنی، تخم خیارین نیم کوفتہ، تخم خطمی، خار خسک کوفتہ ھر ایک 7 ماشہ۔ اور گل نیلوفر، گاؤزبان ھر ایک 5 ماشہ کو آلوبخارا پانچ دانہ رات پانی میں بگھو دیں یا تھوڑی دیر نیم گرم پانی میں بھگو دیں۔ صبح کو مل کر شربت بزوری کے ساتھ ایک ھفتہ پلایں۔

  • اگر آرام نہ آۓ تو مریض کو آرام کرنے دیں جیسے ھی درد میں تھوڑا افاقہ ھو تو دوالمسک معتدل 5 تولہ، یا دوالمسک بارد جواھر والی 5 ماشہ ھمراہ عرق برنجاسف 2 تولہ اور شربتِ نیلوفر 2 تولہ کے دیں۔ (بشکریہ بیاضِ اجمل)

7. یرقان: یہ مرض بھی اصل میں جگر کی سوزش ھے اور ھم اسکو الگ لکھیں گے۔

 

جگر کے خاص ٹیسٹ

  • ایل ایف ٹی
  • اے ایل ٹی
  • اے ایس ٹی
  • الکلایؑن فاسفاٹیس
  • بلوروبن
  • البومن
  • یوریا
  • امونیا
  • یرقان اے بی سی
  • پی ٹی
  • پی ٹی ٹی
  • الٹراساؤنڈ
  • سی ٹی سکین
  • لیور بایؑ اپسی
  • لیور اینڈ تلی ٹیسٹ


Comments are Closed