بال Hair

بال Hair

Follicular Unit Transplant – FUT

بالوں کے بارے دلچسپ معلومات

بال مردہ خلیۓ ہوتے ہیں۔اوسط سر کے بال 1 لاکھ تک ہوتے ہیں جبکہ پورے جسم میں 50 لاکھ تک بال ھو سکتے ہیں۔ بالوں کو خوبصورت اور چمکدار بنانے کے بہت سارے ٹوٹکے ہیں۔ قدرتی بال Hair سفید ہوتے ہیں انکو ایک خاص مادہ سیاہ رکھتا ہے۔ گنج پن (hair loss) کا پوری دنیا میں کوئی بھی علاج نہیں ہے کیونکہ جس خانے سے بال گر گیا تو اب اس جگہ سے بال اگنے کا امکان ختم ہو گیا۔ البتہ کمزور یا گرتے بالوں کو بچایا جا سکتا ہے۔ بالوں کے گرنے یا گنج پن کی ایک سے زیادہ وجہ ہو سکتی ہے۔ چند وجوھات درج ذیل تصویرمیں ہیں۔

 90٪ بال گرونگ فیز(ایناجن) میں ہوتے ہیں جبکہ 10٪ بال آرام کی حالت (ٹیلوجن فیز) میں ہوتے ہیں۔ بال ہر ماہ آدھا انچ بڑھتے ہیں۔ ایک بال ڈیڑھ سے تین فِٹ تک لمبا ہو سکتا ہے۔ اسکے بعد یہ خود ہی گر جاتا ہے۔ تقریباً 50٪ لوگوں میں پچاس سال کی عمر میں گنج پن یا تو ظاھر ہو چکا ہوتا ہے یا پھر وہ مکمل گنجے ہو چکے ہوتے ہیں۔ سالانہ تقریباً 1 لاکھ لوگ ہیؑر ٹرانسپلانٹ کرواتے ہیں۔ پوری دنیا میں تقریباً 98٪ ایسے مرد ھیں جنکے گنج پن کی وجہ موروثی یا جینیاتی ہوتی ہے۔ جبکہ 50٪ عورتیں اس میں شامل ہیں۔ گنج پن کا شکار لوگوں کی صرف 7٪ آبادی ایسی ہے جنکے پیچھے اور سایؑڈوں پر بال ہوتے پیں جوکہ 30-40 سال کے درمیان میں ظاھر ہوجاتی ہے۔ جینیاتی کے بعد جو سب سے بڑی وجہ گنج پن کی ہے وہ مختلف بیماریاں (تھایؑرایؑڈ، خود مدافعاتی اور خون کی کمی) ہیں۔ ایک فولیکل سے 4 تک بال اگتے ہیں۔ ایک بال کے تین حصے ہوتے ہیں سب سے اندر والا میڈولا، پھر کارٹکس اور سب سے باہر والا کیٹیکل کہلاتا ہے۔ ایک صحتمند انسان کے روزانہ 100 بال گر بھی جایں تو فکر نہ کریں۔ 

طبیب کے متعلق چند ضروری ہدایات

مریض کے متعلق چند ضروری ہدایات

 تحقیق کہتی ہے کہ گنج پن اگرہونا ہوتا ہے تو 50 سال سے پہلے شروع ہو چکا ہوتا ہے۔ جبکہ ہر 3 میں سے 1 عورت میں حیض بندش کے دوران بال کم ہونا شروع ہو جاتے ہیں اور اسکی وجہ عورتوں میں مردانہ ہارمون ٹیسٹوسٹیرون کا متاثر ہونا ہے۔

تحقیق کے مطابق گنج پن کا جین اور DHT ھارمون اکیلے ہی بال گرنے کی وجہ نہیں ہیں۔ ایسا بھی ہوتا ہے کہ ٹین ایج میں ہی بال گرنا شروع ہو جاتے ہیں مگر یہ شازونادر ہی ہوتا ہے۔ اور یہ بھی تحقیق سے ثابت ہے کہ بال گرنے کا عمل ایک ہی رفتار سے نہیں ہوتا بلکہ کم زیادہ ہوتا رہتا ہے۔ اور کبھی تھوڑی دیر کے لیے رک بھی جاتا ہے۔ اگرچہ اسکی بھی وجہ سامنے نہیں آسکی مگر یہ بھی تحقیق سے ثابت شدہ حقیقت ہے کہ عمر بڑھنے کے ساتھ ساتھ بال کم ہوتے ہیں۔ ڈائی سلفایڈ بونڈ سے بال مضبوط ہوتے ہیں۔ گیلے بال 30٪ زیادہ لچکدار ہوتے ہیں۔ قدرتی طور پر تیل والے گلینڈزبالوں کے لیے جو تیل بناتے ہیں انکو سیبم کہتے ہیں۔ یہ تیل اپنے آپ بال میں نہیں جاتا بلکہ بالوں میں کنگھی کرنے، بالوں کے آپس میں ٹکرانے اور بالوں کو چھونے سے پھیلتا ہے۔ اب یہاں دلچسپ پہلو یہ ہے کہ بالوں کی کٹنگ بھی کر لیں تو تیل (سیبم) اتنا ہی بنتاہے تو بال چھوٹے رکھنے کا فایدہ ہی ہے کہ وہ قدرتی طور پر آیلی رہیں۔ بلوغت میں جہاں اور بہت سارے ھارمونز میں تبدیلی آتی ہے تو سیبم بھی زیادہ بنتا ہے۔

صرف عورتوں میں ہونے والے کینسرز

بالوں میں قدرتی طور پر معمولی منفی چارج ہوتا ہے لہزا ایسے شیمپو زیادہ مناسب ہیں جو ہلکے مثبت چارج کے حامل ہوں۔ تاکہ زیادہ اچھا اثر کریں۔ کنڈیشنرز میں معمولی مثبت چارج ہوتا ہے جو کہ منا سب ہے۔ اسکے علاوہ کنڈیشنرز میں سیلیکان بھی ہوتا ہے جوکہ بالوں کے منفی چارج کے ساتھ مل جاتا ہے اور نمی بخشتا ہے لہزا بال چمکدار اور جاندار لگتے پیں۔ بالوں کو بلیچ کرنے سے بال کمزور، کھردرے اور گرنے لگتے ہیں۔ بلیچ کرنے سے قدرتی مادہ میلانن اڑ جاتا ہے۔ بالوں کو سیدھا کرنے والے کیمیکلز بعض اوقات مستقل گنج پن کا باعث بنتے ہیں۔ البتہ برقی سٹریٹنر سے کام چلایا جا سکتا ہے۔ ہیؑر ڈرایؑر سے بال کی ہوائی نالیاں متاثر ہوتی ہیں۔ اسی طرح ہاٹ رولرز بھی بالوں کو ڈایؑریکٹ ہیٹ دے کر بالوں کو کمزور کرتے ہیں۔

ہمارے ملک میں معاشرے کے جنسی رویؑے کیسے ہیں یہاں کلک کریں۔

بال Hair

Permanent_Hair_Removal

جب جنیاتی وجہ سے بال گر جایں تو اس جگہ پر خون کی ضرورت نہیں رہتی۔ ہیؑر ٹرانسپلانٹ میں جہاں نیا فولیکل لگایا جاتا ہے وہاں خون کی سپلائی ہو جاتی ہے۔ اگرچہ ٹھوس تحقیقی ثبوت ابھی نہیں ہے مگر اندازا ہے کہ سگریٹ نوشی سے سرکے اندر خون سپلائی متاثر ہوتی ہے۔ بہت زیادہ دیر تک دھوپ میں رہنے سے بھی بال پیدا کرنے والے خلیۓ کم ہوتے ہیں۔ بال جلدی کینسر ہونے سے روکتے ہیں۔ اور کئی طرح کے کینسرز کی وجہ سے بھی بال گر جاتے ہیں۔ چھ سال بعد پرانا بال گر کر نیا آ جاتا ہے۔ گرم آب و ہوا والے مقامات پر بال زیادہ بڑھتے ہیں۔

تحقیق کہتی ہے کہ کم از کم چار جینز گنج پن کا سبب ہیں۔ اور ماں باپ میں سے کوئی ایک جینز آجائے تو گنج پن آسکتا ہے۔ اور یہ بھی ہو سکتاہے کہ اگلی نسل یا اس سے اگلی نسل میں گنج پن ظاھر ہو۔ Dehydrotestosterone  ھارمون جینیاتی طور پر گنج پن کا زمہ دار ہے۔ جبکہ عورتوں میں androgenic hormones زمہ دار ہے۔ ایسا ہی ایک تجربہ ایک ڈاکٹر اپنے ایک مریض پر کر چکا ہے۔ ڈاکٹر نے اپنے مریض کو جو کہ زہنی مریض بھی تھا testosterone کا انجیکشن لگا دیا۔ چند ہفتوں میں ہی اسکے بال کافی سارے گرگۓ اور دوبارہ اس جگہ سے بال کبھی بھی نہیں آئے۔ Dehydroepiandrosterone ھارمون کی وجہ سے بھی گنج پن ہو سکتا ہے۔ اور prednisone ھارمون کی وجہ سے بھی گنج پن ہوتا ہے۔ بعض عورتوں میں حمل کے دوران ایسٹروجن کی کمی بیشی ہو جاتی ہے۔ اگر کمی ہو تو بال گرتے ہیں اور بیشی ہو تو بال گھنے بھی ہو جاتے ہیں۔

 ریسرچ سے ثابت ہے کہ شدید گنج پن سے متاثر افراد میں 30 سال کی عمر تک بال بہت زیادہ گر چکے ہوتے ہیں۔ جبکہ جن لڑکوں میں گنج پن 20 سال کی عمر میں ہی شروع ہو جائے تو انکے بال 30 سال والوں سے بھی جلدی گرتے ہیں۔  عموماً بال گرنے کا عمل 45-50 سال کی عمر سے شروع ہو کر 60-65 سال تک چلتا ہے پھر تھوڑا کم ہوجاتا ہے۔

بعض عورتوں میں حمل سے لے کر دودھ پلانے کے عرصے تک بال گرتے رہتے ہیں اس میں پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ یہ عمل عارضی ہے اور گرنے والے بال بھی واپس آجایں گے۔ اسکے برعکس جب حیض بندش والی عمر شروع ہو جائے تو اس وقت ایسٹروجن کا اخراج بھی بند ہو رہا ہوتا ہے تو بھی بال گرنا شروع ہو جاتے ہیں۔

ایک بات یاد رکھنے کی یہ ہے کہ جب ھیؑر فولیکل ختم ہو جاتا ہے تو ہی خون کی سپلائی نہیں ہوتی اسکا مطلب ہے کہ ھیؑر فولیکل ہو گا تو ہی خون کی چھوٹی شریانیں وہاں آیؑں گی۔ لہزا دوران خون کی کمی گنج پن کا باعث نہیں ہے۔

غزا اوراحتیاط: دماغی کمزوری کا علاج کریں، سبب کے مطابق علاج کریں۔ گیلے بالوں میں کنگھی کبھی نہ کریں۔ اسی طرح دھاتی کنگھی نہ کریں۔

hair loss reason in photo

گنج پن کے اسباب: موروثی، چوٹ یا صدمہ، بیماری، غزایؑت کی کمی (پروٹین، فولاد، نمکیات، وٹامن ای، دورانِ خون کی کمی، شریانوں میں رکاوٹ، تھایؑرایڈ گلینڈ، بند مسام، جگر کی خرابی، سر کی کویؑ سوزش، ھارمون میں غیر متوازن پن، انگریزی ادویات کے سایڈافیکٹ, دماغی کمزوری. ناقص شمپو، ناقص ھیؑرڈایؑر. مانع حمل اور انٹی ڈپریشن ادویات. حمل کی پیچیدگیاں, حیض بندش والی عمر، بیٹا بلاکرز ادویات، کینسر. ٹایفایڈ, ڈایؑٹینگ کا جنون، اور ان عناصر کی زیادتی یا موجودگی (سیلینم، سیسہ، کیڈمیم، ایلومینیم، کاپر) جبکہ یہ ابھی تک ثابت نہیں کیا جا سکا کہ کتنی مقدار تک لے سکتے ہیں۔

بال لمبے گھنے ملایؑم کرنے والے ٹوٹکے

نوٹ:  گنج پن کو انگریزی میں الوپیشیا بھی کہتے ہیں. جتنے بھی لگانے والے تیل ہیں انکو مالش کرنے کا ضرور لکھا ہوتا ہے۔ غور والی بات یہ ہے کہ سر کی جلد پورے جسم میں سب سے سخت ہوتی ہے اور وہاں دوران خون نہیں پہنچتا لہزا مالش سے ہی خون کی حرکت تیز ہو کر جلد متحرک ہو جاتی ہے۔ اور ایک بات نوٹ کر لیں کہ بالوں کے مسایؑل جلدی حل نہیں ہوتے۔

  1. برگ حنا، کلونجی، حب الرشاد، سناء مکی، آملہ ہر ایک 16 گرام کو 900 گرام فروٹ کے سرکہ میں 5 منٹ ابالنے کے بعد چھان لیا گیا۔ روزانہ یہ لوشن مالش کیا جاتا رہا کافی فرق پڑا۔

  2. لہسن میں ھم وزن نمک اور افستین پیس کر ملا دیں اور سرکہ ڈال کر گنج پر لگایا گیا بھت فایؑدہ ھوا۔

  3. جن لوگوں کے بال بہت زیادہ گرتے ہوں ان کیلئے یہ نسخہ بہت لاجواب ہے۔ کلونجی کا تیل اور ادرک کا پانی ہم وزن لے کر روزانہ صبح وشام بالوںمیں لگائیں ۔بال گرنا بند ہو جائیں گے اور نئے بال آنا شروع ہو جائیں گے-

  4. جوئوں کیلئے:چقندر کے پتے‘ ڈنٹھل اور ایک چقندر کاٹ کر پانی میں خوب جوش دیجئے اور اس سے بال دھوئیے جوئیں آئندہ نہیں ہوں گی ایک ماہ مسلسل بالوں میں یہی عمل دہرائیے۔

  5. جوئوں کیلئے:چقندر کے پتے‘ ڈنٹھل اور ایک چقندر کاٹ کر پانی میں خوب جوش دیجئے اور اس سے بال دھوئیے جوئیں آئندہ نہیں ہوں گی ایک ماہ مسلسل بالوں میں یہی عمل دہرائیے۔

  6. املی کو رات پانی میں بھگو دیں صبح اس کے پانی سے سر دھوئیں اس سے بال لمبے‘ ہو جاتے ہیں اس عمل کو ہفتے میں تین بار کریں اس کے بعد ناریل کا تیل استعمال کریں۔

  7.  ایک دیسی انڈہ لے لیں اس کو توڑ کر ایک پیالی میں ڈالیں جتنا انڈہ ہو اتنی مہندی سرخ دیسی پسی ہوئی‘ کیمیکل کے بغیر ہو‘ اتناہی سرسوں کا تیل اور دہی۔ ان سب کو ملا کر پیسٹ بنائیں اور انگلیوں سے بالوں کی جڑوں میں لگائیں اور کم از کم چار پانچ چھ گھنٹےلگا رہنے دیں ۔ اس کے بعد سر دھوئیں لیں ،چند ہفتوں کے استعمال سےآپ کو وہ رزلٹ ملیں گے کہ آپ حیران ہو جائیں گے۔ (بحوالہ کتاب میرے طبی رازوں کا خزانہ)

  8. بالوں کوکالےکرنے کے لیے اسطخدوس 6 گرام ایک کپ پانی میں پانچ منٹ پکا کر صبح وشام پئیں انشاءاللہ آہستہ آہستہ بال کالے ہونا شروع ہو جائیں گے-

  9. ناریل کے تیل کی سرپرروزانہ 15 منٹ مالش کرنےسےبال گھنے،لمبے اور ملائم ہوجاتے ہیں۔

  10. ایکلیموں کو درمیان سے کاٹ لیں اور پھر اسے بالوں میں ایسے رگڑیں کہ اسکا رس بالوں کی جڑوں تک پہنچ جائے ۔اسے 2 گھنٹے لگا رہنے دیں ،پھرنیم کے پتوں کوپانی میں اُبال لیں اوراس پانی سےسردھو لیں۔ احتیاط کریں !یہ پانی آنکھو ں میں نہ جائے۔ جوئوں کا مکمل خاتمہ ہو جائے گا اور بالوں میں چمک آجائے گی۔

  11. لہسن کا چھلکا حسب ضرورت لے کر روغن زیتون میں جوش دے کر محفوظ کرلیں اور جب بھی نہائیں ‘ نہانے کے بعد یہی تیل استعمال کریں۔ ان شاء اللہ بہت فائدہ ہوگا اور بال نہیں گریں گے۔

  12. کلونجی کا تیل اور ادرک کا پانی ہموزن لے کر روزانہ صبح وشام بالوں میں لگائیں۔ بال گرنا بند ہو جائیں گے اور نئے بال آنا شروع ہو جائیں گے۔

  13. ھیؑر آیؑل: تھوڑا سا آملہ کا سفوف، کری پاؤڈر اور میتھی کو رات بھر پانی میں بگھو رکھیں سبح کو ناریل کے تیل میں ڈال کر 30-40 منٹ تک ابال لیں نرم آنچ پر تیل تیار ھے۔ 2-3 روز بالوں کی جڑوں میں مالش کریں۔

  14. جن علاقوں کا پانی اچھا نہ ھو وہ مناسب شیمپو کے بعد کنڈیشنر کا استعمال کریں۔

  15. سر کی جلد کو کسی سخت کپڑے یا تولیے سے رگڑ کر جنگلی پیاز ملیں۔ جب سرخ ھو جاۓ تو رائی اور لہسن پیس کر ضماد کریں۔

  16. کویؑ بھی antiseptic شمپو استعمال کریں جیسے زنک اور سیلینیسم والے شمپو جبکہ کولتار والے زیادہ اچھے سمجھے جاتے ھیں۔ ھفتہ میں 2-3 بار۔

  17. کھوپرے کے تیل کو گرم کرکے مساج کریں پھر گرم تولیہ گیلا کر کے رکھیں۔

  18. بال بڑھانے والی خوراک: مٹر، لوبیا، پھلیاں، اخروٹ (وٹامن بی7)، بادام، پنیر، انڈا، مچھلی، گوشت، تازہ و خشک پھل، سبزی کا سوپ، گری کا تیل لگانے کے لیے، دودھ، دھی، لسی، سبز دھنیا (کاپر)، سلفر، سبز پتوں والی سبزیاں، میٹھے آلو، آملہ، لوکی۔

  19. 250 گرام آملہ، 125 گرام سکاکایؑ اور 125 گرام میتھی دانہ پیس کر رکھ لیں۔ 2 چمچ پانی میں رات بھر بھگو دیں صبح چھان کر سر دھو لیں۔ ھفتہ میں 2 بار کرنے سے بال لمبے ہو جایؑں گے۔

  20. ایلوویرا کا گودا نکال لیں۔ بالوں کو کسی اچھے شیمپو کے ساتھ صاف کریں۔ اب ایلوویرا بالوں اورجلد میں 15 میٹ لگا رہنے دیں۔ پھر پانی سے دھولیں۔ 1 ہفتہ میں ہی بال صحتمند ہو جایں گیں۔ بہترین کینڈیشنر ہے۔ بدبو دور کرتا ہے۔

  21. پیاز کا رس نکال کر بالوں میں اچھی طرح نرم ھاتھ سے مالش کریں۔ پھر شمپو سے دھو لیں۔ عارضی گنج پن کا علاج کرتا ہے۔

  22. پیتھا کدو کے رس کو بالوں میں مالش کرنے سے خشکی اور دماغی کمزوری ختم ہوتی ہے۔ آیؑورویدک میں اسے بطور ٹانک ستعمال کروایا جاتا ہے۔

  23. بال خورہ: یہ بہت ڈھیٹ مرض ہے۔ جمال گھوٹا کا تیل اسی جگہ احتیاط سے لگایں۔

  24. تھایؑم کے پتے 2 کپ لیں انکو 2 لٹر پانی میں اچھی طرح ابال لیں۔ پانی ٹھنڈا کر کے سر دھولیں۔ ہفتے میں 2-3 بار کرنے سے بدبو دور، بال لمبے اور چمکدار ہو جاتے ہیں۔

  25. مختلف کیمیکلز اور بال ڈائی کرنے سے اگر بال خراب ہو جایں یا گرنے لگیں تو انڈے اور زیتون کا تیل آزمایں۔

  26. قبل از وقت سفید بالوں کو سیاہ کرنے کے لیے مربہ آملہ اور ورق نقرہ میں رکھ کر کھایں۔ اور دوپھرکو جوارش جالینوس 1-1 چمچ 2 ماہ تک استعمال کریں۔

  27. اگر خود دوا نھیں بنا سکتے تو صبح نہار منہ قرص فولاد 1 عدد، قرصِ مرجان 1 عدد، ہمراہ خمیرہ گاؤزبان عنبری 6 گرام 1 ماہ تک استعمال کریں۔

  28. سفید سرکہ ہلکے بال جبکہ رنگدار سرکہ گھنے بالوں میں چمک پیدا کرتا ہے۔

  29. ماش کی دال پیس لیں اور اسکا لیپ کریں بال لمبے ہوں گے۔

  30. ٹیسٹوسٹیرون ھارمون کی زیادتی سے جنیاتی گنج پن ہوتا ہے اسکو روکنے کے لیے فیناسٹیرایؑڈ استعمال کریں مگر ڈاکٹر سے پوچھ کر۔

  31. باڈی بلڈرز جو سٹیرایؑڈ استعمال کرتے ہیں وہ بھی گنج پن کا باعث بن جاتا ہے۔

  32. عورتوں میں حیض بندش والا عرصہ شروع ھوتا ھے لہزا بہت سارے ھارمون کے غیرمتوازن ہونے کی وجہ سے بھی بال گرتے ہیں۔ اس عرصے میں ھارمون سپلیمنٹ ضرور لیں۔

  33. کبھی کبھی ترش پانی سے بھی بالوں کو دھویں۔ ترش پانی سے مراد تھوڑا سا سرکہ یا لیموں پانی میں ڈال لیں۔

  34. بالوں کی نگھداشت بچپن سے ہی کرنی چاہئ کیونکہ زیادہ تر یہ ہی عمر ہوتی ہے جب بالوں کی مناسب دیکھ بھال، خوراک، مناسب دھوپ، ہوا، زور زور سے برش کرنا چاہے۔ تب ہی وہ کچھ حد تک اپنے بال بچا سکیں گے جنکے ہاں گنج پن کا رواج موروثی ہے۔

  35. سر کی ورزشیں: ورزش نمبر1: دونوں ھاتھوں کو کانوں کے اوپر رکھیں اور آہستگی سے ہاتھوں کو آپس میں ملانے کی کوشش کریں کہ جلد پر بل پڑ جایں۔ یہ ہی کام انگلیوں سے بھی ممکن ہے۔ خیال رہے کہ بالوں میں تیل نہ لگایا گیا ہو۔ ورزش نمبر2: بہت آہستگی سے بالوں کو کھوپڑی سے اوپر اٹھایں اور بار بار اسکو دوھرایؑں۔ ورزش نمبر3: دونوں ھاتھوں کی انگلیوں بالوں میں ایسے ڈالیں جیسے پیار سے محبوب ڈالتا ہے پھر جلد کو حرکت دینے کی کوشش کریں۔ ورزش نمبر4: بالوں کو مضبوطی سے پکڑ کر سر سے پرے کھینچیں۔ ورزش 5: سر کی جلد کو بیٹھے بیٹھے ناخن سے اہستگی سے کھرچتے رہیں جیسے کچھ لوگ خشکی ڈھونڈتے ہیں۔ ورزش نمبر5: کوئی بھی تیل لے کر جلد کی مالش کریں۔ نوٹ: مالش کبھی بھی کسی اور سے نہ کروایں کیونکہ دوسرا آپکے بالوں کو اتنا اچھا نہیں سمجھ سکتا اور بال ٹوٹنے کا باعث بنے گا۔

  36. کولڈ ڈپ: سر کو 10 سیکنڈ سے 1 منٹ تک سرد پانی میں رکھیں پھرخشک کرنے کے بعد ہلکے ھاتھ کی انگلیوں سے جلد میں مساج کریں۔ اسکی حکمت یہ ہے کہ ٹھنڈا پانی جلد کو سرد کر دیتا ہے اب جبکہ مساج ہوا ہے تو دوران خون فوراً ادھر کا رخ کرتا ہے اور جگہ گرم ہو جاتی ہے۔

  37. جلد کمپریس: اس میں سوتی کپڑے کی ٹوپی کو سرد پانی سے بھگو کر نچوڑ کر پہن لیں پھر اسکے اوپر اونی ٹوپی پہن لیں۔ خیال رہے کہ سر کو ایک خوشگوار گرمی محسوس ہونی چاہۓ۔ 10 منٹ بعد یہ ہی عمل پھر دہرایں۔

  38. follicular unit extraction میں صحتمند جلد سے فولیکلز کو اکھاڑ کر گنج پن والی جگہ پر لگا دیتے ہیں۔ اسکا فایؑدہ توہے مگر طریقہ علاج مہنگا ہے۔ عام طور پر 100 روپے فی فولیکل لگایا جاتا ہے۔ اس طرح 1000 بال لگانے کا خرچہ 1 لاکھ تک ہے۔ اسکا ہلکا سا سایؑڈ افیکٹ جو ہے وہ یہ لگتا ہے کہ نیؑ جگہ پر زیادہ دوران خون آ جاتا ہے اور پرانے فولیکلز کو مطلوبہ خوراک نہیں ملتی۔

  39. نیم کے تیل مین دگنا زیتون کا تیل یا ناریل کا تیل ڈال کر جڑوں میں لگایں تھوڑی دیر بعد سر کو نرم شمپو سے دھو لیں۔ بال صحتمند، چمکدار اور بالوں کی بدبو دور ہو جاۓ گی۔

  40. آدھا چمچ کھانے والا سرکہ ایک کپ پانی میں ڈال کر سر کی جڑوں پر مالش کریں کچھ دیر لگا رہنے دیں۔ پھر کسی نرم شمپو سے دھو لیں۔ بال چمکدار ہو جایں گے۔

  41. ارنڈی کا تیل بالوں کو سیاہ کرنے کی خصوصیت کا حامل سمجھا جاتا ہے۔ یہ تیل سفید بالوں کی سیاہی کو بحال کرتا ہے۔ بال بہت زیادہ سورج کی تیز روشنی کا سامنا کرنے باعث براؤن ہو جاتے ہیں۔ یہ تیل بالوں کو پہنچنے والے کسی نقصان کے ازالے کے لئے بھی مفید ہے۔ اس تیل کے متواتر استعمال سے سر کی دائمی خشکی دور ہو جاتی ہے۔ پلکوں اور بھنووں پر لگانے سے پلکیں گھنی اور خوبصورت ہوتی ہیں۔

  42. بارش کا پانی لےکر 70 مرتبہ سورۂ فاتحہ ، 70مرتبہ آیت الکرسی  اور70،70مرتبہ چاروں قل پڑھ کردم کریں دنیا کے ایسے مریض جو لاعلاج ہو چکے ہیں۔اسے دم کرکے پلائیں اللہ کے فضل سے مریض ایسے ٹھیک ہوتا ہے جسکا گمان نہیں ہوتا ۔اگر بارش کا پانی مزید نہ ملے تو سادہ پانی ملا کر بڑھا تے رہیں ۔چند دن یا زیادہ عرصہ مریض کو استعمال کروائیں۔ (عبقری)

بال Hair

کن لوگوں کا گنج پن کا علاج نھیں ھو سکتا

  1. جو پیدایؑشی گنجے ھوں

  2. جنکا موروثی مسؑلہ ھو۔

  3. جنکا فولیکل (hair follicle) مر چکا ھو۔

  4. شدید حادثے کی وجہ سے (آگ لگ کر گنج نکل آۓ وغیرہ)

 بال Hair

بالوں کے امراض

 

  1. بال خورہ

بال خورہ ایک پریشان کن مرض ہے۔ اس کا شکار زیادہ تر مرد ہوتے ہیں اور زیادہ تر یہ داڑھی اور بھنوں کے مقام پر ہوتا ہے۔ جہاں سے تکلیف کا آغاز ہوتا ہے۔ پہلے وہاں دھبہ پڑتا ہے اس کے بعد چھوٹی چھوٹی پھنسیوں کا دائرہ بن جاتا ہے‘ پھنسیاں کچھ روز میں سوکھ جاتی ہیں اور ان کے کھرنڈ باریک چھلکوں کی صورت میں جھڑ جاتے ہیں۔ ساتھ ہی بال گر کر گول چکنا بن جاتا ہے اور بھوسی لگی رہتی ہے۔

  1. خشکی

اس مرض میں سر کی جلد پر بفا یا خشکی آ جاتی ھے۔ جو کہ چکنایؑ پیدا کرنے والے گلینڈز کی اضافی رطوبت ھوتی ھے۔ خشکی کو دور کرنے کے لیے کولتار سے بنا ھوا جراثیم کش شیمپو فایؑدہ مند ثابت ھو سکتا ھے۔ لیکن یاد رھے کہ جراثیم کش ھونے کی وجہ سے اسکا استعمال بھرحال نقصاندہ ھو سکتا ھے۔ اسکی چار قسمیں ھیں۔ سکیلی، ویکسی، آیلی اور پایؑٹیراسز۔

خشکی  کا علاج

  • سر میں چکنایؑ پیدا کرنے والی گلٹیوں (Sebaceous Glands) کی رطوبت زیادہ ھونے سے خشکی یا بفا ھو جاتی ھے۔ آدھا پاؤ پیازکے چھلکے کاٹ کر تل کے تیل میں جلا لیں۔ 1 تولہ گندھک باریک پیس کر شامل کریں اور مالش کریں۔ سلفر صابن سے سر دھویں اور بالوں کو تقویت دینے والی غزایں کھایں۔

  • سالیسایکلڈ ایسڈ کی مرھم جلد اور سر پر سے چھلکے اتارنے کے لیے استعمال ھوتی آرھی ھے۔ کویؑ بھی انٹی سپٹک شمپو جیسے کہ زنک اور سیلینیم والے جبکہ کولتار والے ذیادہ اچھے سمجھے جاتے ھیں۔ انکو ھفتہ میں 3 بار استعمال کریں۔ مثال کے طور پر پولی ٹار 350، سیلسن بلیو وغیرہ۔

  • سوا تولہ سکاکایؑ کی پھلیاں پاؤ بھر پانی میں پکا کر سر دھونے سے بال لمبے اور خشکی کا خاتمہ ھوجاتا ھے۔

  • 2 تولہ ترپلہ رات کو بھگو کر صبح اسکے پانی سے سر دھو لیں۔

  • لیموں پانی میں ڈال کر سر دھویں خشکی دور ھو جاۓ گی۔

  • اسکے علاوہ بیکری اور میدے کی چیزیں چھوڑ دیں اور نزلہ یا بلغم پیدا کرنے والی چیزیں بھی چھوڑ دیں۔ نشاستہ والی غزا کم کر دیں۔ بھینس کا دودھ بھی نزلہ کرتا ھے گاۓ کا پی لیں۔ نمک بالکل چھوڑ دیں۔ صبح تیزابی پھل جیسے سنگترہ، مالٹا، لیموں، انگور، آلوبخارا، خشک پھل وغیرہ استعمال کریں۔ دوپھر اور رات کے کھانے میں سبزیوں کا سوپ لیں۔ شھد، مکھن، موسمی پھل اور سلاد کھایں۔ ھفتہ میں ایک دن صرف پھل کھایں۔

  • Polytar Scalp Coal Tar Shampoo لگانے سے افاقہ ہوتا ہے۔

3. سفید بال

میلانن نام مادہ بالوں کو سفید رکھتا ھے۔ جب یہ عمر کے ساتھ کمزور ھو جاۓ تو بال سفید ھونے لگتے ھیں۔ آپ نے دیکھا ھو گا کہ جن لوگوں کے بال بڑھاپے میں بھی سیاہ ھیں انکا دراصل میلانن ھی زیادہ ھوتا ھے۔

  • جن غزاؤں میں گندھک، سلیکا اور فولاد شامل ھو وہ زیادہ کھایں۔

  • ھفتہ میں 2 بار انڈوں کی زردی اور زیتون کا تیل استعمال کریں۔

  • کھانے میں مچھلی کا تیل، بادام، پنیر، انڈا، پیاز، لھسن استعمال کریں۔

  • گردن اور کندھے کا تناؤ دور کرنے کے لیے مناسب ورزش کریں۔گردن کو ڈھیلا چھوڑ کر سر کو دایؑرے میں گھمایں۔کولڈ ڈپ والا فارمولہ جو اوپر گزر گیا ھے وہ کریں۔

  • چاۓ کی پتی کا قھوہ بنا کر بالوں پر لگایں ایک ھی بار سے بال سیاہ تو نھیں ھوں گے مگر کچھ دونوں کے متواتر استعمال سے کافی فرق پڑ جاۓ گا۔ یہ طریقہ کیمیکلز سے بنے ھیؑر ڈایؑرز سے زیادہ مفید ھے۔ اسکے بعد اچھا سا کنڈیشنر استعمال کیا جا سکتاھے۔

4. بالوں کا چِرنا (Splitting)

اس میں بال دو شاخہ ھو جاتے ھیں۔ عموماً لمبے بالوں میں یہ مسؑلہ ھوتا ھے۔ اسکی وجہ غزایؑت کی کمی ھے۔ اسکا علاج بھی وھی ھے  جو سفید بال اور خشکی دور کرنے کے طریقے  آزماۓ جا سکتے ھیں۔ زیادہ تر ایسے بال کھردرے، غیر چمکدار اور کمزور ھوتے ھیںَ۔

5. بالوں کی بوسیدگی (Atrophy)

اس  مسؑلے میں بال سرے سے لے کر جڑ تک چرجاتے ھیں۔ ایک بال 3-4 حصوں میں تقسیم ھو جاتا ھے۔ اسکے علاوہ بال  پتلے  ھو جاتے ھیں۔ ایسے بالوں کو اگر کھینچا جاۓ تو جڑ تک نکل آتے ھیں۔ اسکا علاج بھی وھی ھے جو سفید بالوں اور خشکی کے لیے ھے۔

6. جویؑں (Lice)

جوؤں کی وجہ سے سر میں کھجلی ھوتی ھے اگرچہ اس سے بالوں کو تو کویؑ نقصان نھیں ھوتا۔ انکا علاج بھی مشکل نھیں ھے۔ مناسب صفایؑ کریں۔ روزانہ نھایں۔تارا میرا کا تیل لگایں۔ اسکے انڈے زرا مشکل سے نکلتے ھیں۔ پھر بھی علاج جاری رکھیں۔

7. داد یا رنگ ورم (Ringworm)

یہ ایک فنگس کی انفیکشن ھے اور یہ عموماً چھوٹے بچوں کو ھوجاتی ھے جو سکول جاتے ھیں چونکہ بال خورہ سے ملتی جلتی ھے لھزا کچھ لوگ اسکو بال خورہ سمجھ لیتے ھیں۔ جبکہ یہ داد ھے جو کہ بڑے لوگوں میں کم ھی ھوتی ھے۔ بال خورہ میں بال جلدی ضایؑع ھوتے ھیں جبکہ اسکے آھیستہ آھیستہ ضایؑع ھوتے ھیں۔  متاثرہ حصہ بالکل گنجا نھیں ھوتا مگر فولیکلز باھر نکل آتے ھیں۔ایک کھرنڈ سا بن جاتا ھے۔ اسکو پنجابی میں دھدر بھی کھتے ھیںَ۔ داد جسم کی جلد پر کھیں بھی ھو سکتی ھے۔ اس فنگس کے بیکٹیریا  ذیادہ  تر سر کی مردہ جلد، گیلی جلد میں پاۓ جاتے ھیں۔اسکے علاوہ کسی زخم کے بگڑنے سے بھی بن سکتا ھے۔ سر کی جلد کی اس بیماری کو  Tinea Capitis کھتے ھیں۔ یہ بھت جلدی مرض ھے اور اس سے بچنا بھت ضروری ھے۔ بچاؤ کے لیے متاثرہ شخص جانور  یا  پرندہ کویؑ چیز یا گندی مٹی بھی شامل ھیں۔گرم اور نم جگھوں پر پایؑ جاتی ھے۔ گھر میں پالتو جانور جیسے بلی، کتا، گھوڑا، خرگوش، بھینس، گاۓ، بکری وغیرہ سے پھیل سکتی ھے۔ لھزا ان جانوروں کو حفاظتی انجیکشن ضرور لگوایں۔

چند مفید بالوں کی ڈوایؑسز

بال Hair

Permanent Hair Reduction Device

بال Hair

Permanent_Hair_Removal_Device

بال Hair

Permanent Hair Reduction Device 2

بال Hair

Hair Straightening Comb Brush

بال Hair

Hair Growth Helmet

بال Hair

Hair_Loss_Magnetic_Comb

بال Hair

Hair loss treatment

بال Hair

L’Oreal Steam Pod Hair Straightener

بال Hair

Scalp_Hair_Care_Analyzer_Camera

بال Hair

Dyson_Supersonic™_hair_dryer

بال Hair

IRESTORE LASER HAIR GROWTH SYSTEM

بال Hair

laser technology for hair loss

بال Hair

iHelmet Stimulate Hair Growth

بال Hair

HairMax Alopecia Hair Thinning

بال Hair

Wifi_smart_scalp_hair_follicle_detector

بال Hair

Color Skin Detector Hair Scalp

بال Hair

Permanent Hair Reduction

بال Hair

Lice Detector

بال Hair

LED Skin Rejuvenation and Folliculitis Treatmen

بال Hair

DETECTING_HAIR_LOSS_AND_THINNING

بال Hair

Multi-functional Portable High Frequency Device

بال Hair

Anti-lice Machine


ماخوذ

  • حکیم حافظ طاہر محمود بٹ
  • عبقری


Comments are Closed